اپنی تحریر شائع کروائیں

حلقہء اہل ذوق اپنے قارئین کیلئے ایک ایسا سلسلہ شروع کررہا ہے جس کے ذریعے جدید ذہن، جدید سوچ اور جدید مشاہدہ رکھنے والے نوجوان لکھاری منظرِ عام پر آئیں گے۔حلقہء اہل ذوق اپنی ویب سائیٹ اور فیس بُک صفحہ کے ذریعے سماجی، معاشرتی، نفسیاتی، معاشی مسائل کو اجاگر کرے گا تاکہ موجودہ مسائل اور ان کے حل کی جانب پیش قدمی کی جاسکے۔ نوجوان لکھاری اپنی تحریریں نظم، غزل، مضمون، مکالمہ، انشائیہ، افسانہ، کہانی یا کسی بھی تحریری شکل میں بھجوا سکتے ہیں۔بنیادی جائزہ لینے کے بعد اس تحریر کو ویب سائیٹ اور فیس بک صفحہ پر نشر کیا جائے گا۔

شرائط:
1: تحریر کمپوز شدہ ہو۔(کوئی بھی ایسی تحریر شائع نہیں کی جائے گی جو تصویری شکل میں بھیجی گئی)
2: کسی شخصیت یا ادارے پر بالواسطہ یا بلا واسطہ تنقید نشر نہیں کی جائے گی۔
3: کسی طبقے، کمیونٹی، زبان، رنگ، نسل پر تنقید نشر نہیں کی جائے گی۔
4: بے محل، غیر ضروری تفصیل پر مبنی ہیجان انگیز تحریر نشر نہیں کی جائے گی۔
5: بے وزن اور بحر سے خارج اور مہمل شاعری نشر نہیں کی جائے گی۔
6: نثری تحریر کم از کم 500 الفاظ پر مشتمل ہو۔ اگر افسانچہ یا منی فکشن ہے ، تو کم از کم دو افسانچے یا کہانیاں بھیجی جائیں۔ دو سطری تحریر یا اقتباسات نشر نہیں کیے جائیں گے۔
7: کسی کتاب، ویب سائٹ یا بلاگ پر پہلے سے نشر شدہ تحریر نشر نہیں کی جائے گی۔ انکشاف ہونے کے بعد تحریر بھیجنے والے کو مستقل طور پر نااہل قرار دیا جائے گا۔

گذارشات/ہدایات:
1: تحریر میں ادبی چاشنی کو ملحوظِ خاطر رکھیں۔
2: زبان مہذب، شائستہ اور معیاری استعمال کریں، بازاری اور عامیانہ جملوں اور حتیٰ المقدور املاء وغیرہ کی غلطیوں سے گریز کریں۔
3: تحریر کے ساتھ اپنی تصویر بھی ارسال کریں۔ (لازمی نہیں ہے۔)
4:ایڈیٹر کو کوئی بھی تحریر رد اور ترمیم کا مکمل اختیار حاصل ہے۔ تحریر نشر کرنے کا وقت اور طریقہ کار بھی ادارے کی صوابدید پر ہے۔
5: یہ سلسلہ مستقل بنیادوں پر شروع کیا جا رہا ہے لہذا ہماری ویب سائیٹ پر ایک سے زائد اشاعت شدہ تحاریر کے مصنفین کا باقاعدہ صفحہِ کوائف یعنی پروفائل بنائی جائے گی۔
6: ویب سائیٹ اور فیس بُک صفحے پر تحریروں کی اشاعت کا باقاعدہ آغاز 5 ستمبر 2016سے ہوگا۔

آپ اپنی تحریریں ہمیں اس ای میل ایڈریس پر بھیج سکتے ہیں:
editor@ahlezauq.com
مزید معلومات کے لیے رابطہ کریں:
info@ahlezauq.com
03124212303

نوٹ: حلقہء اہل ذوق کے اس قدم کامقصد صرف اتنا ہے کہ وہ لکھاری جنہیں کسی ادبی رسالے یا دیگر میگزین میں اشاعت کا موقع نہیں ملتا ان کی تخلیقات کو اپنی ویب سائیٹ اور فیس بُک صفحہ کے ذریعے لاکھوں قارئین تک پہنچایا جائے تاکہ اُن قابل لکھاریوں کو لوگ جان سکیں اور ساتھ ہی یہ کوشش بھی ہے کہ نئی نسل میں ادب کا شوق پیدا کیا جائے اور نئے لکھنے والوں کی حوصلہ افزائی کے لیے ایک پلیٹ فارم مہیا کیا جائے۔ ادارے کو چونکہ اس عمل سے کسی بھی قسم کا مالی فائدہ حاصل نہیں ہوگا لہذا وہ لکھاریوں کو اُن کی تحاریر کا معاوضہ دینے کا پابند نہیں ہوگا۔ البتہ وہ اُن کی تخلیقات کو لاکھوں پڑھنے والوں تک ضرور پہنچائے گا اور انہیں تخلیق کار کے طور پر متعارف کروائے گا۔